انڈونیشیا کا لاپتہ ہو جانے والا مسافر طیارہ کریش کر گیا


جکارتہ (مانیٹرنگ +این این آئی)انڈونیشیا میں نجی ایئرلائن کے طیارے کا دارالحکومت جکارتہ سے اڑان بھرنے کے کچھ دیر بعد رابطہ منقطع ہوگیا۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق مقامی میڈیا نے کہا کہ جہاز میں 50 سے زائد افراد سوار تھے اور وہ مغربی کلیمنتان صوبے کے شہر پونٹیانک جارہا تھا۔قابل اعتماد ٹریکنگ سروس فلائٹ ریڈار 24نے ٹوئٹر پر کہا کہ سری وِجایا ایئر کی پرواز ‘ایس جے 182’ کی بلندی میں جکارتہ سے اڑان بھرنے کے بعد تقریبا 4 منٹ بعد ایک منٹ سے بھی کم وقت میں 10 ہزار فٹ کی کمی آئی۔ٹریکنگ ڈیٹا میں موجود رجسٹریشن تفصیلات کے

مطابق لاپتہ ہونے والا بوئنگ 500-737 جہاز 27 سال پرانا تھا۔انڈونیشین ایئرلائن سری وِجایا ایئر نے اپنے بیان میں کہا کہ وہ اپنے بیان سے قبل طیارے سے متعلق اب بھی تفصیلی معلومات جمع کر رہی ہے۔ نجی ٹی وی چینل کی رپورٹ کے مطابق حکام کو شک ہے کہ طیارہ پرواز بھرنے کے بعد سمندر میں گر کر کریش ہو گیا ہے، سمندر میں طیارے کی تلاش کے لئے ریسکیو ٹیمیں تشکیل دے کر کشتیاں تعینات کر دی گئی ہیں، دوسری جانب بھارتی ریاست مہاراشٹرا کے ہسپتال میں خوفناک آتشزدگی کے باعث 10 نومولود جان کی بازی ہار گئے۔بھارتی میڈیا کے مطابق میٹرنٹی ہسپتال میں آتشزدگی کا واقعہ ہفتے کی صبح مہاراشٹرا کے ضلع بھنڈارا کے مرکزی اسپتال میں پیش آیا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق آگ لگنے کے باعث 10 نومود جھلس کر اور دم گھٹنے سے ہلاک ہو گئے جبکہ 7 بچوں کو بچا لیا گیا، حادثے میں ہلاک ہونے والے بچوں کی عمریں چند روز سے لیکر 3 ماہ تک ہیں۔حکام کے مطابق آگ لگنے کی وجوہات کا تاحال علم نہیں ہو سکا ہے تاہم اس حوالے سے تحقیقات کا آغاز کر دیا گیا ہے۔





Source link

اپنا تبصرہ بھیجیں