برطرف اہلکار نے اے ایس ایف میں بھرتیوں کے نام پر سینکڑوں بے روزگار نوجوانوں سے کروڑوں ہتھیانے کا تہلکہ خیز انکشاف


راولپنڈی (آن لائن)ایئر پورٹ سکیورٹی فورس (اے ایس ایف)مین مختلف کیڈر کی بھرتیوں کے نام پر اے ایس ایف کے مبینہ برطرف شدہ اہلکارنے سینکڑوں بے روزگار نوجوانوں سے کروڑوں روپے ہتھیا لئے جبکہ تھانہ صادق آباد پولیس اے ایس ایف کی مدعیت میںمقدمے کے اندراج کو3ہفتے گزرنے کے بعد بھی ملزم کو گرفتار نہ کر سکی جمع پونجی سے محروم ہونے والے امیدواروں نےاپنے ساتھ ہونے والی مالی زیادتی کے سکینڈل کا انکشاف کردیا ۔تفصیلات کے ساتھ سوشل میڈیا پر وائرل کر دیامتاثرہ افراد کے مطابق18جولائی کو اے ایس ایف کے فاروق نامی اہلکار نے 400 کے الگ بھگ

امیدواروں سے پیسے لے کر بھرتی کروانے کا وعدہ کیااور امیدواروں سے3لاکھ روپے فی کس کی ڈیل کر کے ڈیڑھ لاکھ روپے فی کس ایڈوانس لئے تمام امیدواروںنے 50فیصدرقم دے کر اس سے اشٹامپ کروا لیا اور باقی رقم جوائننگ کے وقت دینے کا معاہدہ طے ہوااس دوران مذکورہ شخص محکمے سے اپنی وابستگی ، افسران سے روابط اور بھرتی سے متعلقہ دستاویزات ، تحریری و جسمانی امتحان ، میڈیکل ٹیسٹوں سمیت تمام امور سے متعلق امیدواروں کوشواہد کے ساتھ گاہے بگاہے اعتماد میں لیتا رہاجبکہ راول روڈ پارک میں امیدواروں کے ٹیسٹ لینے کے ساتھ ہولی فیملی ہسپتال میں میڈیکل بھی کروایا گیااور امیدواروں کو بتایا گیا کہ یکم سے20ستمبرbasic -48 batchکے فیز 2کے تحت ان کی ٹریننگ شروع ہو گی جبکہ ایف آئی آر کے اندراج سے2 یا3 دن قبل تقریباً 300کے قریب امیدواروں کو آفر لیٹر دیئے گئے تھے جس پر محکمے کی طرف سے 15اکتوبر کو ٹریننگ کے لئے بلایا گیا تھا ذرائع کے مطابق ابھی تقریباً 150 لوگ ایسے تھے جن کا آفر لیٹر آنا باقی تھا متاثرین نے الزام لگایا کہ مذکورہ شخص نے سینکڑوں بے روزگاروں سے مجموعی طور پر7سے8کروڑروپے ہتھیا لئے ہیںدریں اثناتھانہ صادق پولیس نے 10اکتوبر کواے ایس ایف کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر آصف منظور کی مدعیت میں تعزیرات پاکستان کی دفعات 420،468،471اور170کے تحت مقدمہ نمبر1835درج کیا جس کے مطابق اے ایس ایف سے برطرف شدہ اہلکارفاروق سکنہ پرانا سوزوکی سٹاپ غریب آباداپنے بھائی حارث ، عتیق اور نامعلوم مردو خواتین کے ہمراہ سادہ لوح لوگوںسے اے ایس ایف میں بھرتی کے نام پر پیسے بٹورتا ہے اور محکمے کی بدنامی کا باعث ہے فاروق سی بلاک کے علاقے میں 35سے40نوجوانوں کو جمع کر کے ان سے بھرتی کے نام پر کاغذات کا لین دین کر رہا تھا جس کی اطلاع ملنے پر جب وہاں پہنچے تو جو انہیں دیکھتے ہی وہ ہنڈا کار نمبر ایفڈی زیڈ 7924میں فرار ہو گیا جبکہ اس کے ساتھ موجود افراد کرولا کار میں فرار ہو گئے بعد ازاں لڑکوں سے معلوم ہوا کہ فاروق نے ان سے میڈیکل ٹیسٹ کے نام پر 4200روپے فی کس وصول کئے اس طرح فاروق نے جعلی محکمانہ کاغذات تیار کر کے محکمے کی ساکھ کو نقصان پہنچایا ۔





Source link

اپنا تبصرہ بھیجیں