بیگم شمیم اختر کو میاں شریف کے پہلو میں سپرد خاک کردیا گیا،نماز جنازہ میں اہم شخصیات کے علاوہ بڑی تعداد میں لوگوں کی شرکت


لاہور(این این آئی)سابق وزیراعظم محمد نواز شریف اورمسلم لیگ (ن) کے صدرمحمد شہباز شریف کی والدہ محترمہ بیگم شمیم اختر کو نماز جنازہ کی ادائیگی کے بعد جاتی امراء رائے ونڈ میں شوہر میاں محمد شریف کے پہلو میں سپرد خاک کر دیاگیا، نمازجنازہ میں شہباز شریف، حمزہ شہباز، صدر آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر، شریف فیملی کے عزیز و اقارب،سیاسی و مذہبیجماعتوں کے مرکزی و صوبائی رہنماؤں، کارکنوں سمیت زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی نامور شخصیات نے شرکت کی، مرحومہ کی رسم قل اتوارکو جاتی امراء رائے ونڈ میں ادا کی جائے گی جس میں صرف

شریف خاندان کے افراد اور قریبی عزیز و اقارب شریک ہوں گے۔ تفصیلات کے مطابق نواز شریف اور شہباز شریف کی والدہ محترمہ بیگم شمیم اختر کی میت برٹش ائیر ویز کی پرواز بی اے 259کے ذریعے لندن سے علامہ اقبال انٹر نیشنل ائیر پورٹ لائی گئی۔ میت کے ہمراہ شریف برادران کی ہمشیرہ اوربہنوئی سمیت دیگر رشتہ داربھی لندن سے لاہور پہنچے۔مسلم لیگ(ن) کے صدر شہباز شریف اور پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف حمزہ شہباز نے خاندان کے دیگر افراد اور مسلم لیگ (ن) کے رہنماؤں کے ہمراہ میت وصول کی۔ بعدازاں میت کو ائیر پورٹ سے ایمبولینس کے ذریعے شریف میڈیکل سٹی پہنچایا گیا اور سرد خانے میں رکھ دیا گیا۔ نماز جناز ہ سے کچھ دیر قبل محترمہ بیگم شمیم اختر کی میت کو ایمبولینس کے ذریعے سرد خانے سے جاتی امراء رائے ونڈ ان کی رہائشگاہ پر لایا گیا جہاں پر شریف خاندان کے افراد، عزیز واقارب اورپارٹی کی خواتین رہنماؤں نے ان کا آخری دیدار کیا۔ میت کو کچھ دیر جاتی امراء رائے ونڈ میں رکھنے کے بعد دوبارہ ایمبولینس کے ذریعے شریف میڈیکل سٹی کے سرد خانے میں رکھ دیا گیا اور نماز ظہر کی ادائیگی کے فوری بعد میت کو نماز جنازہکیلئے مختص جگہ شریف میڈیکل سٹی کی گراؤنڈ میں لایا گیا۔ منتظمین کی جانب سے جناز گاہ کو نشانات اور خاردار تاریں لگا کرتین حصوں میں تقسیم کیا گیا۔ جامعہ نعیمیہ کے مہتم اعلیٰ علامہ راغب حسین نعیمی نے مرحومہ کی نماز جنازہ پڑھائی اور فاتحہ خوانی کرائی۔ نماز جنازہ میں مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف، پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف حمزہ شہباز،وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر،راجہ ظفر الحق،شاہد خاقان عباسی، احسن اقبال، پرویز رشید، راناثنااللہ،انجینئر خرم دستگیر، خواجہ سعدرفیق، اقبال ظفر جھگڑا، رامیر مقام، عطا اللہ تارڑ،پرویز ملک، غلام احمد بلور، جاوید ہاشمی،جمال کاکڑ، میاں جاوید شفیع، میاں طارق شفیع،سردار ایاز صادق،رانا مقبول، محمد زبیر،خواجہ محمد آصف،ملک ندیم کامران، علی پرویز ملک،سردار اویس لغاری،سہیل ضیاء بٹ،کرنل (ر) مبشر جاوید، خواجہ عمرا ن نذیر، خواجہ سلمان رفیق، رانا مشہود، رانا ارشد، میاں جاوید لطیف، برجیس طاہر، طلال چوہدری،ملک ریاض، مہتاب عباسی،مرتضیٰ جاوید عباسی،سیف الملوک کھوکھر، حنیف عباسی، سینیٹر پروفیسر ساجد میر، منشا اللہ بٹ، مجتبیٰ شجاع الرحمان،راؤشہاب الدین، طلحہ برکی،اسد اشرف، قیصر امین بٹ،حاجی حنیف،مرزاجاوید،ماجد ظہور،میاں مرغوب،بابر محمود،چوہدری شہباز، ارمغان سبحانی، میاں عبد الرؤف،وارث کلوسمیت سیاسی و مذہبی جماعتوں کے رہنماؤں،مسلم لیگ (ن) کے اراکین قومی و صوبائی اسمبلی، کارکنوں اور زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی نامور شخصیات نے شرکت کی۔ نماز جنازہ کی ادائیگی کے بعد میت کو دوبارہ جاتی امراء لے جایا گیا جہاں پر مرحومہ کو شوہرمیاں محمدشریف کے پہلو میں سپرد خاک کر دیا گیا۔ تدفین کے موقع پر شہباز شریف، حمزہ شہباز سمیت شریف خاندان کے افراد اورقریبی عزیز وا قارب موجود تھے۔تدفین کے عمل کے بعد ایک بارپھر مرحومہ اور شریف خاندان کے دیگر مرحومین کیلئے اجتماعی دعا کرائی گئی۔نما ز جنازہ کی ادائیگی میں شرکت کے لئے آنے والی شخصیات نے شہباز اور حمزہ شہباز سے ملاقاتکرکے محترمہ بیگم شمیم اختر کے انتقال پر اظہار تعزیت اور ان کے درجات کی بلندی کیلئے دعا بھی کی۔ علاوہ ازیں بیگم تہمینہ دولتانہ،شائستہ پرویز ملک، مریم اورنگزیب، عظمیٰ بخاری، سائرہ افضل تارڑ سمیت پارٹی کی دیگر خواتین رہنما جاتی امراء رائے ونڈ پہنچیں اور انہوں نےمریم نواز سے اظہار تعزیت کیا۔پولیس کی جانب سے نماز جنازہ میں اہم شخصیات کی شرکت کے پیش نظر شریف میڈیکل سٹی اور جاتی امراء کے باہر سکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کئے گئے جبکہ ٹریفک کی روانی کو بر قرار رکھنے کیلئے ٹریفک وارڈنز بھی تعینات رہے۔

موضوعات:

ترکی کا ابن بطوطہ

آپ اگر حضرت ابو ایوب انصاریؓ کے مزار سے اتاترک برج کی طرف آئیں تو آپ کو پُل سے پہلے بائیں جانب ایک چھوٹی سی قدیم مسجد دکھائی دے گی‘ یہ مسجد چلبی کہلاتی ہے اور اس مناسبت سے اس پورے علاقے کا نام چلبی ہے‘ چلبی کون تھا؟ یہ تاریخ کا انتہائی دل چسپ کردار تھا‘ پورا ….مزید پڑھئے‎

آپ اگر حضرت ابو ایوب انصاریؓ کے مزار سے اتاترک برج کی طرف آئیں تو آپ کو پُل سے پہلے بائیں جانب ایک چھوٹی سی قدیم مسجد دکھائی دے گی‘ یہ مسجد چلبی کہلاتی ہے اور اس مناسبت سے اس پورے علاقے کا نام چلبی ہے‘ چلبی کون تھا؟ یہ تاریخ کا انتہائی دل چسپ کردار تھا‘ پورا ….مزید پڑھئے‎





Source link

اپنا تبصرہ بھیجیں