عمران خان نے کہا تھا کہ اگر پانچ سو آدمی گو عمران گو کا نعرہ لگائیں گے تو میں استعفیٰ منہ پر مار کر گھر چلا جاؤں گا، آج یہاں کئی پانچ سو ہزار لوگ کہہ رہے ہیں، گو نیازی گو، خواجہ آصف کے وزیراعظم کیخلاف انتہائی نازیبا الفاظ


گوجرانوالہ (این این آئی)پاکستان مسلم لیگ (ن)کے سیکرٹری جنرل سابق وزیر داخلہ احسن اقبال اور سابق وزیر دفاع خواجہ آصف نے کہا ہے کہ سلیکٹڈ استعفیٰ نہیں دیگا، عوام کا سیلاب اسلام آباد پہنچ کر اقتدار سے نیچے اتارے گا،عمران خان سلیکٹڈ ہے، دلوں پر حکمرانی کر نے والا وزیر اعظم نوازشریف ہے،نوازشریف کے دور میں آٹا 35اور چینی 50روپے تھی،آج آٹا 85اور چینی 115روپےہے، موجودہ حکمران حاجی نہیں سب سے بڑے کرپٹ ہیں۔ جمعہ کو جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے سابق وزیر احسن اقبال نے کہاکہ وزیر اعظم وہ نہیں ہوتا جسے سلیکٹڈ کر کے لوگوں پر بٹھا دیا

جائے وزیر اعظم وہ ہوتا ہے جو دلوں پر حکمرانی کرے نوازشریف آج بھی دلوں میں بستا ہے۔ انہوں نے کہاکہ یہ لوگ ہمیں غداری کے سرٹیفکیٹ دیتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ 2013میں ملک بھر میں بجلی نہیں تھی، مچھر کاٹتے تھے اور لوگ سو نہیں سکتے، نمازی مسجد میں جارہے تھے اور وضو کیلئے پانی نہیں ہوتا تھا، اٹھارہ اٹھارہ گھنٹے ملک میں لوڈشیڈنگ ہوتی تھی۔ انہوں نے کہاکہ نوازشریف نے کہا تھا میں اندھیرے ختم کرونگا اور چار سالوں میں اندھیرے ختم کئے، ملک میں اٹھارہ ہزار ووٹ بجلی لگی، ہمارے قائد نے چار سالوں میں گیارہ ہزار میگا واٹ بجلی لگا کر اندھیرے ختم کئے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ہر روز بم پھٹتا تھا، قوم لاشیں اٹھا کر تھک گئی تھی، نوازشریف نے فوج کے ساتھ ملکر دہشتگردی ختم کی، پانچ سو ارب روپے آپریشن ضرب عضب اور رد الفسا د کیلئے دیئے اور۔لیگی رہنما خواجہ آصف نے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان نے کہا تھا کہ اگر پانچ سو آدمی گو عمران گو کا نعرہ لگائیں گے تو میں استعفیٰ منہ پر مار کر گھر چلا جاؤں گا اگر تم میں شرم حیا اور غیرت ہے تو آج یہاں کئی پانچ سو ہزار لوگ آج کہہ رہے ہیں گو نیازی گو۔ اگر تم میں شرم حیا ہے اگر تم میں غیرتہے اگر رتی بھر بھی غیرت ہے تو کئی ہزار لوگ گو نیازی گو کہہ رہے ہیں، اس موقع پر خواجہ آصف نے گو نیازی گو کے نعرے لگوائے، خواجہ نے وزیراعظم عمران خان کو بے غیرت کہہ دیا، خواجہ آصف نے کہا کہ ہم اسے اقتدار سے اتاریں گے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان مزید عمران نیازی کی جعلی حکومت کا متحمل نہیں ہو سکتا، انہوں نے کہاکہ نوازشریف کے دور میں آٹا اور چینیسستی تھی،جو غریب کو 34روپے کلو آٹا اور 50روپے چینی دیتا تھا وہ چور ہوگیا اور آج غریب کو آٹا 80اور چینی 115روپے کلو دے وہ حاجی نہیں سب سے بڑا کرپٹ ہے۔ انہوں نے کہاکہ کشمیر کا نو جوان سینے پر پاکستان کا پرچم لگاتا تھا اور بھارت کی گولی سینے پر کھاتا تھا، بھارتی فوجیوں کے ساتھ وہ پاکستان زندہ باد کہتا تھا، کشمیری شہداء ہم سے سوال کرتے ہیں کہ پاکستانکے 72سال میں جمہوری حکومت آئی، مارشل لاء آیا، کبھی بھارت کو کشمیر ہڑپ کر نے کی جرات نہیں تھی آج مودی نے کشمیر کو ہڑپ کر کے بھارت کا حصہ بنالیا ہے اس کا جواب عمران نیازی کو دینا ہوگا، اس نے پاکستان کی طاقت کمزور کردی ہے،ہماری مسلح افواج مضبوط ہیں اگر پاکستان کی طاقت میں کمی نہیں ہوئی تو عمران نیازی نے کشمیر پر سودا کر دیا ہے۔انہوں نے کہاکہمہنگائی سے نجات دلانی ہے، بے روز گاری ختم کر نی ہے، ملک کو آئین کے مطابق چلانا ہے، صوبوں، گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر کو مضبوط وفاق کے ساتھ چلانا ہے تو ہر شہری، دانشور، ہر وکیل، ہر مزدور، ہر کسان، ہر استاد، سر کاری ملازم ہماری موومنٹ کا ساتھ دے۔ انہوں نے کہاکہ ہمارا وعدہ ہے جونوازشریف نے شروع کیا تھا اسے دوبارہ شروع کرینگے، سی پیک کو دوبارہ شروعکرینگے اورپاکستان کو ترقی یافتہ ملک بنائینگے۔سابق وزیر دفاع او ر لیگی رہنما خواجہ آصف نے کہاکہ 2012میں نوازشریف نے اسی جگہ پر جلسہ کیا تھا، میں سیالکوٹ سے ایک جلوس لیکر آیا اور جلوس نہ پہنچ سکا،وہ ساری سڑکیں نوازشریف کے جانثاروں نے جام کر دی تھیں لیکن آج میں نے اس بات کو یقینی بنایا کہ میں تین چار گھنٹے جلسے میں پہلے پہنچاؤں تاکہ جس جدوجہدکا نقطہ اعتراض کررہے ہیں اس میں کوئی غیر حاضری نہ لگ جائے۔ ایک مقدس فریضے کا آغاز کررہے ہیں، تمام اپوزیشن جماعتیں ایک پلیٹ فارم پر اکٹھی ہوئی ہیں جس شخص کو ڈھائی سال پہلے مسلط کیا گیا تھا اس کے خاتمے کے دن آگئے، پاکستان جعلی حکومت کامزید متحمل نہیں ہوسکتا ہے۔انہوں نے کہاکہ عمران خان نے کہا تھا کہ پانچ سو آدمی گو عمران گو کہہ دیں تو چلا جاؤنگااگر تم میں شرم و حیاء ہے تو کئی ہزار لوگ کہہ رہے ہیں گو نیازی گو۔انہوں نے کہاکہ نہ شرم ہے نہ حیاء ہے وہ استعفیٰ نہیں دے گا وہ وقت آئیگا آپ کا سیلاب اسلام آبا د جائیگا اور ہم اس کو اقتدار سے نیچے اتاریں گے۔ انہوں نے کہاکہ آج سارا پاکستان عمران خان کی جان کو رو رہا ہے، اس کے ووٹر بھی، سپورٹر بھی اور سلیکٹر بھی، کوئی شخص موجودہ حکومت سے خوش نہیں ہیں۔ انہوںنے کہاکہ اپوزیشن جماعتیں آپ کو عمران خان سے نجات دلائینگے۔انہوں نے کہاکہ خوشحالی کے سفرکی بنیاد نوازشریف نے رکھی تھی، یہاں بجلی ہو، روشنیاں ہوں، مہنگائی نہ ہو، ڈاکے اور ریپ نہ ہو تو نوازشریف کو لائیں۔انہوں نے کہاکہ چند ہفتوں میں عمران نیازی سے جان چھوٹ جائیگی، انشاء اللہ یہ اپنی طاقت سے جائیگا۔پاکستان مسلم لیگ (ن)کے سینئر رہنما جاوید ہاشمی نے کہا ہےکہ ہم اپنے ووٹ کی عزت مانگ رہے ہیں، یہ کہتے تھے تبدیلی آچکی ہے، پاکستان کی گلیوں میں دیکھو لوگ غریب ہوگئے۔سابق وزیر اعلیٰ بلوچستان ڈاکٹر عبد المالک نے کہاکہ یہ کہتے ہیں آپ چھوٹے صوبے ہیں لیکن ہم ملک کے وارث ہیں،انہوں نے کہاکہ مشرف کی لگائی گئی آگ ہم سب کو برباد کررہی ہے۔انہوں نے کہاکہ یہاں اٹھارہویں ترمیم کو ختم کر نے کی بات ہورہی ہے یہاں پارلیمانی نظام چلے گا کوئی صدارتی نظام نہیں چلے گا۔انہوں نے کہاکہ بلوچستان کے مسئلے کو سمجھ لیں، وہا ں روزانہ لوگ لاپتہ ہورہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ملک میں آئین ہے، ہر شخص اور ادارے کو آئین کے مطابق چلنا پڑے گا۔

موضوعات:

عابد علی کیسے گرفتار ہوا؟

موٹروے کا سانحہ 9 ستمبر کی صبح تین بجے پیش آیا‘ عابد علی عرف عالی اور شفقت علی عرف بگا نے خاتون کو لوٹنے کے بعد بچوں کے سامنےآبروریزی کا نشانہ بنایا‘ خاتون کو پہلے عابد علی نےآبروریزی کیا‘ شفقت اس دوران بچوں پر بندوق تان کر کھڑا رہا‘ اس کے بعد یہ بندوق تان کر کھڑا ہو گیا اور ….مزید پڑھئے‎

موٹروے کا سانحہ 9 ستمبر کی صبح تین بجے پیش آیا‘ عابد علی عرف عالی اور شفقت علی عرف بگا نے خاتون کو لوٹنے کے بعد بچوں کے سامنےآبروریزی کا نشانہ بنایا‘ خاتون کو پہلے عابد علی نےآبروریزی کیا‘ شفقت اس دوران بچوں پر بندوق تان کر کھڑا رہا‘ اس کے بعد یہ بندوق تان کر کھڑا ہو گیا اور ….مزید پڑھئے‎





Source link

اپنا تبصرہ بھیجیں