نیب نے محکمہ تعمیرات و مواصلات کے سپرنٹنڈنٹ انجینئر کے کروڑوں کے غیر قانونی اثاثوں کا سراغ لگا لیا، تہلکہ خیز انکشاف


کوئٹہ( این این آئی)قومی احتساب بیورو بلوچستان نے کروڑوں روپے کے غیر قانونی اثاثہ جات کیس کی تحقیقات مکمل کر کے سپرنٹنڈنٹ انجینئر سی اینڈ ڈبلیو ڈیپارٹمنٹ نور محمد لہڑی اور بے نامی دار ملک نوید کاسی کے خلاف ریفرنس احتساب عدالت میں جمع کرادیا ہے۔تحقیقاتکے دوران انکشاف ہوا کہ ملزم نے دوران سروس کوئٹہ اور کراچی میں 25 کروڑ روپے سے زائد کے ناجائز اثاثے بنائے، غیر قانونی اثاثہ جات میں کوئٹہ میں چھ فلیٹ اورایک عالی شان بنگلہ، ڈی ایچ اے کراچی میں کروڑوں روپے مالیت کا ایک محل نما بنگلہ بھی شامل ہیں۔ علاوہ ازیں بینک اکاونٹس

کی چھان بین سے پتہ چلا کہ ملزم اور بے نامی داروں کے نام پر بنائے گئے اکاونٹس سے 132 ملین روپے کی مشتبہ ٹرانزیکشن ہوئیں۔ملزم نے واضح کرپشن کیس سے بچنے کے لئے ہائیکورٹ میں بے بنیاد درخواست جمع کی جسے معزز چیف جسٹس بلوچستان ہائیکورٹ جسٹس جمال خان مندوخیل نے مسترد کردیا اور نیب کو 20 دن میں کیس کی تحقیقات مکمل کرکے ریفرنس احتساب عدالت میں جمع کرانے کی ہدایات جاری کیں۔نیب کی تحقیقاتی ٹیم نے جانفشانی سے کام کرتے ہوئے سپرنٹنڈنٹ انجینئر نور محمد لہڑی اور بے نامی دار ملک نوید کاسی کے خلاف نا قابل تردید ثبوت اکٹھے کرکے احتساب عدالت کوئٹہ میں ریفرنس دائر کر دیا ہے ، واضح رہے گرفتاری سے بچنے کے لئے ملزم نے عدالت سے عبوری ضمانت حاصل کر رکھی ہے۔





Source link

اپنا تبصرہ بھیجیں